نیشنل ریفائنری لمیٹڈ

نیا سی یو آئی این (CUIN) رجسٹریشن نمبر۰۰۰۱۷۴۷ این ٹی این (NTN) نمبر (۷-۰۷۱۱۳۲۵)

کمپنی کی نوعیت اور اسکاتعارف:

نیشنل ریفائنری لمیٹڈ (NRL)ایک پبلک لمیٹڈ کمپنی کے طور پر ۱۹ أگست ۱۹۶۳ ؁کو وجود میں آئی۔ حکومتِ پاکستان نے ، جو کہ اسٹیٹ پٹرولیم رفائننگ اینڈ پٹروکیمیکل کارپوریشن(PERAC) میں اپنی حصص داری کے ذریعے کنٹرول کر رہا تھا، وزارتِ پیداوار کے زیر اہتمام اکنامک ریفارمز آرڈر، ۱۹۷۲ کے تحت این آر ایل (NRL) کا انتظام سنبھال لیا۔

حکومتِ پاکستان نے ۱۹۹۸ ؁میں پیٹرولیم اور قدرتی وسائل کی وزارت کے انتظامی امورکے تحت نیشنل ریفائنری لمیٹڈ کو رکھنے کا فیصلہ کیا۔

جون ۲۰۰۳ ؁ میں حکومتِ پاکستان نے این آر ایل (NRL)کو اپنے نجکاری پروگرام میں شامل کرنے کا فیصلہ کیا۔ فروخت کیلئے اسٹرٹیجک سرمایہ کار کو%۵۱ شیئرز کی مالیت اور انتظامی امور کی منتقلی کی پیشکش کی گئی، نتیجتاً نجکاری کیلئے قیمت کے تعیّن کے تکنیکی جائزہ کے عمل کو شروع کیا گیا۔ بلاٰخر، جولائی ۲۰۰۵ ؁ میں مسابقتی بولی کے بعداین آر ایل(NRL) کو اٹک گروپ نے حاصل کرلیا۔ سات جولائی ۲۰۰۵ ؁ کو کمپنی کی نجکاری کیبعد اسکے انتظامی امور نئے مالک اٹک گروپ کے حوالے کر دیے گئے۔

جائزکاروباری سرگرمیوں اور ریفائنری کا جا ئزہ:

این آر ایل(NRL) پیٹرولیم مصنوعات کی ایک بڑی رینج کی تیّاری، اسکی پیداوار اور فروخت میں مصروفِ عمل ہے۔ کمپنی کا ریفائنری کمپلیکس کُل تین ریفائنریز، دو لیوب(lube) ریفائنریز اور ایک فیول(fuel) ریفائنری پر مشتمل ہے۔ پہلی لیوب(lube) ریفائنری ۱۹۶۶ ؁میں بر سرعمل آئیِ جسکی خام تیل پروسیسنگ کی صلاحیت سالانہ ۳,۹۷۰,۵۰۰ بیرل اور لیوب(lube) بیس تیل کی پیداواری صلاحیت سالانہ ۵۳۳,۴۰۰ بیرل ہے۔

دوسری لیوب(lube) ریفائنری ،لیوب(lube) بیس تیل کی پیداواری صلاحیت سالانہ ۷۰۰,۰۰۰ بیرل کے ساتھ ۱۹۸۵ ؁میں بر سرعمل آئی ۔جسکی پیداواری صلاحیت جون۲۰۰۸ ؁میں بہتری کے بعد سالانہ ۸۰۵,۰۰۰ بیرل تک پہنچ چکی ہے۔

فیول(fuel) ریفائنری ۱۹۷۷ ؁میں بر سرعمل آئی جسکی خام تیل کی پروسیسنگ صلاحیت سالانہ ۱۱,۳۸۵,۰۰۰ بیرل تھی جوکہ۱۹۹۰ ؁میں(first re-vamp) بہتری کے بعد ۱۶,۵۰۰,۰۰۰ بیرل اور مارچ ۲۰۱۷ ؁میں (second re-vamp) بہتری کے بعد ۱۷,۴۹۰,۰۰۰ بیرل کی سالانہ پروسیسنگ صلاحیت تک پہنچ چکی ہے۔

بی ٹی ایکس (BTX) یونٹ سن ۱۹۸۵ میں بر سرعمل آیاجسکی پیداواری صلاحیت سالانہ ۱۸۰,۰۰۰ بیرل بی ٹی ایکس(BTX)ہے ۔

جون۲۰۱۷ ؁ میں ا ین ار ایل (NRL) میں یواوپی(UOP) لا ئسنس شدہ ڈیزل ہا ئیڈروٹریٹنگ یونٹ بھی بر سر عمل آچکاہے جوکہ ۲۹,۷۶۵ بی پی اس ڈی (BPSD) یورو (EURO-II) II- ایچ ایس ڈی(HSD) ، جیساکہ وزارتِ پٹرولیئم اور قدرتی وسائل نے ہدایت کی ہوئی ہے، پیداکرنے کی صلاحیت رکھتاہے۔ پلانٹ۱۰پی پی ایم (10 PPM) تک سلفرکے مواد کو گھٹانے کی صلاحیت رکھتاہے۔ آئسومرائزیشن یونٹ جو کہ ۶,۷۹۳ بی پی اس ڈی (BPSD) لائٹ نفتھاکوآئسومریٹ میں پروسس کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اکتوبر ۲۰۱۷ میں مکمل ہو چکی ہے اور پیداوار شروع کرچکی ہے۔